What is Leucorrhea? Leucorrhea & Homoeopathic Treatment

What is Leucorrhea?Leucorrhea & Homoeopathic TreatmentCauses Symptoms of Leucorrhea

حیا ھمارے تہزیب اور کلچر کا ایک لازمی جزو ھے جس کی حفاظت کرنی چایئے لیکن شرم و حیا اور جھجک صحت کی راہ میں رکاوٹ نہی بننی چایئے ۔ ھمارے معاشرے میں خواتین جن مسائل پہ گفتگو کرنے سے ھچکچاتی ھیں اس میں لیکوریا کا مسلہ بھی ھے ۔ لیکوریا کے مرض میں عورت کا نسوانی حسن اور خود اعتمادی بری طرح متاثر ھوتی ھے اس لیے آج میں لیکوریا کے اسباب، بچاو اور وجوھات آسان لفظوں میں بیان کرنے کی کوشش کروں گا۔

لیکوریا دو یونانی الفاظ لیکوز جسکی معنی سفید اور ریا جسکی معنی بہنا ھے کا مجموعہ ھیں ۔ ھمارے جسم میں میوکس ممبرین اور گلینڈز مختلف طرح کی رطوبتیں پیدا کرتے ھیں اسی طرح ھمارے جنسی اعضا کے گلینڈز بھی رطوبتیں پیدا کرتے ھیں ، جنسی اعضا کو تر رکھنے کے لیے اور ان کو اندر سے انفیکشن سے پاک رکھنے کے لیے تیزابی رطوبت جنسی غدود بناتے ھیں مردوں میں اور عورتوں میں ان غدودوں کا کام جنسی اعضا کو تر رکھنا اور انفیکشن سے بچا کہ رکھنا ھوتا ھے۔

جیسے مردوں کو قطروں کا مسلہ ھوتا ھے ایسے ھی خواتین میں لیکوریا کا مسلہ عام ھے ، خواتین کے جنسی عضو کو تر اور تیزابی رکھنے کے لیے یہ رطوبت ضروری ھوتی ھے جو اندر سے عضوکو ایسیڈک رکھتی ھے جسکی وجہ سے اندر انفیکشن سے عضو بچا رھتا ھے ، اولیشن کے بعد بی ایچ الکلائن ھو جاتی ھے جسکی وجہ سے کچھ دن کے لیے اسکی پی ایچ ایسڈک سے الکلائن ھو جاتی ھے جن شادی شدہ خواتین کو لیکوریا کا پرانا مسلہ ھوتا ھے اس ایسڈک کنڈیشن کی وجہ سے حمل میں شدید دشواری ھوتی ھے کیونکہ سپرمز کی کافی بڑی مقدار اس ایسڈک کنڈیشن کی وجہ سے مر جاتے ھیں ۔

لیکوریا ھوتا کیا ھے ؟

لیکوریا ایک طرح کا ویجائنل ڈسچارج ھوتا ھے جو نارمل حالت میں تھوڑی مقدار کے ساتھ بے رنگ ، بے بوُ سروائکل سیکریشن کا میوکس ھوتا ھے اس میں پانی کی مقدار اور معیار یعنی کوالٹی اور کوانٹٹی سائکل کے ساتھ تبدیل ھوتے رھتے ھیں ۔

لیکوریا کو عام طور پہ سفید پانی بھی کہا جاتا ھے جس میں سفیدی مائل زردی مائل ڈسچارجز جو بعض دفعہ انفیکشن کی وجہ سے جلن دار اور بد بُودار یا خراشدار بھی ھو سکتے ھیں جس کے ساتھ ساتھ خواتین کو شدید کمزوری ، تھکاوٹ اور کمر درد کی شکائت بھی رھتی ھے۔اس کے ساتھ ساتھ لیکوریا کے مرض کی وجہ سے بدبو اور خراشدار ڈسچارجز کی وجہ سے مریضہ کو خود سے گھن آتی ھے مریضہ خود کو گلٹی محسوس کرتی ھے جس کی وجہ سے مریضہ شدید زھنی تناؤ اور سردرد کی شکائت بھی کرتی ھے۔

لیکوریا اس وقت تک نارمل ھے کوئ بیماری نہی جب تک وہ ٹرانسپیرنٹ ، سفیدی مائل بے رنگ بغیر کسی بُو کے ھے ، کسی قسم کی خارش نہی کسی قسم کی بے چینی نہی لیکناگر لیکوریا کا رنگ تبدیل ھے ، بُو آ رھی ھے ، جلن کر رھا ھے خراش کر رھا ھے ، اٹھنا بیٹھنا چلنا مشکل ھے سر درد، کمر درد ھو رھا ھے کمزوری آ رھی ھے تو معالج سے مشورہ ضروری ھے۔

لیکوریا کی دو بڑی قسمیں اور وجوھات ھیں

نمبر ایک - فزیالوجیکل لیکوریانمب دو - پتھالوجیکل لیکوریا

فزیالوجیکل اور پتھالوجیکل وجوھات کیا کیا ھیں ؟

فزیالوجیکل لیکوریا میں زنانہ ھارمونز کی ترتیب متاثر ھوتی ھے خاص کر ایسٹروجن ھارمون کا لیولمتاثر ھوتا ھے یا دوران حمل یا جنسی جزبات کی زیادتی کی وجہ سے بھی ڈسچارچ زیاد ھو سکتا ھےاس طرح کا لیکوریا عام نوجوان لڑکیوں میں زیادہ پایا جاتا ھے ۔ ۔

پتھالوجیکل وجوھات میں عام غذائ کمی کی وجہ سے ، پرسنل ھائجین کا خیال نہ رکھنے سے، انفیکیشن کا ھو جانا پایا جاتا ھے اگر اسکا علاج بر وقت نہ کروایا جاۓ تو پیچیدگیاں پیدا ھو جاتی ھیں۔ مردوں کےمقابلے میں خواتین کی پیشاب کی نالی انہتائ چھوٹی ھوتی ھے جس کی وجہ سے پیشاب کی نالی کی انفیکشن خواتین میں عام پائ جاتی ھے اس لیے بعض دفعہ لیکوریا اور ویجائنل انفیکشن ، یو ٹی آئ ، ایس ٹی ڈی کا فرق کرنا مشکل ھوتا ھے معالج اپنے تجربہ اور ضروری لیب ٹیسٹس کے بعد مرض کی تشخیص کرتا ھے۔

ان کا علاج پھر ان کی وجوھات کو مد نظر رکھتے ھوے مریض کی علامات اور کیفیت اور اسکی سابقہ میڈیکل ھسٹری کو دیکھتے ھوے بلمثل ھومیو پیتھک دوا تجویز کی جاتی ھے ھومیو پیتھی میں ، کریازوٹ، سیپیا ، اوا ٹوسٹا، کلکیریا کارب ، پلسٹیلا ، نائٹرک ایسڈ ، اور دیگر ادویات علامات اور کیفیت کے مطابق جب استعمال کروائ جاتی ھیں تو بہت اچھے نتائج دیتی ھیں صرف ھومیو پیتھک معالج سے مشورہ کرتے وقت اسکو اپنی مکمل علامات دیں تا کہ بہتر دوا تجویز ھو سکے۔

ھومییو پیتھک علاج کے بارے میں لوگ تین سوالات عام طور پہ کرتے ھیں وہ یہ ھیں ۔

کیا ھومیو پیتھک ادویات دیر سے اثر کرتی ھیں ؟

جی نہی جتنا جلد مریض معالج کے پاس پہنچ آتا ھے اتنا ھی جلدی اسکا علاج ھو جاتا ھے در اصل مریضہ خود ھمارے پاس اس وقت آتا ھے جب اسکو سرجری تجویز کی جا چکی ھوتی ھے یا لا علاج تصور کر دیا جاتا ھے ۔

کیا ھومیو پیتھک ادویات کے کوئ نقصانات یعنی سائڈ ایفیکٹس ھیں ؟

ھومیو پیتھک ادویات کوئ دو سو سال سے پوری دنیا میں استعمال ھو رھی ھیں اور صحت مند انسانوں پہ انکے تجربات کئے گئے ھیں اس لیے آج تک کسی دوا کا ایسا کوئ سائڈ ایفیکٹ سامنے نہی آیا ، دوسری بات ھومیو پیتھک ادویات انہتائ قلیل مقدار میں استعمال کروائ جاتی ھیں جس کی وجہ سے سائڈ ایفیکٹس کا سوال ھی پیدا نہی ھوتا۔

ھومیو پیتھک علاج میں پرھیز کیا ھے ؟

قہوہ ، اچار ، لیموں کوئ بھی کھٹی اور ترش چیز ھم دوران علاج منع کرتے ھیں.

اس موضوع کو جواب دیں

یہ سائٹ انفرادی کمپیوٹر، پرسنل سروس سیٹنگ، تجزیاتی و شماریاتی مقاصد، مواد اور اشتہارات کی کسٹمائزیشن میں فرق تلاش کرنے کے لئے کوکیز اور دوسری ٹریکنگ ٹیکنالوجیز کو استعمال کرتی ہے نجی معلومات کی حفاظتی اور کوکیز پالیسی