قوّتِ باہ کا خاص نسخہ

مردانہ تولیدی جراثيم اسپرمز کی کمی اور قوّتِ باہ کا خاص نسخہ:

بوھڑ:

برگد (فارسی:برگد، عربی: ذات الذوانب ، سنسکرت: وٹ ورکش، ہندی: بڑھ، انگریزی: Banyan tree ) جسے عرف عام میں بوہڑ بھی کہا جاتا ہے ایک گھنا سایہ دار درخت ہوتا ہے جس کی عمر ایک ہزار سال سے زیادہ ہوتی ہے۔ کسی زمانے میں بھارت اور پاکستان میں یہ درخت سڑکوں اور شاہراہوں کے کناروں پر عام تھا مگر اب ختم ہوتا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ اسے دیہات کا مرکزی درخت بھی کہا جاتا تھا جس کے نیچے چوپالیں لگائی جاتی تھیں مگر یہ ثقافت اب جدید طرزِ زندگی میں تقریباً ختم ہو چکا ہے۔ برگد کا درخت جب ایک خاص عمر سے بڑا ہو جائے تو اس کی شاخیں سے ریشے جھک کر زمین میں مل جاتی ہیں اور درخت کی چوڑائی زیادہ ہو جاتی ہے اسے ریش برگد (برگد کی داڑھی) کہا جاتا ہے۔

برگد کے پتوں یا نرم شاخوں سے دودھیا رنگ کا گاڑھا محلول نکلتا ہے جسے برگد کا دودھ یا شیرِ برگد کہتے ہیں۔ یہ جسم پر لگ جائے تو سیاہ نشان بناتا ہے۔ اگر تھوڑی دیر ہوا میں رہے تو ربڑ کی طرح جم جاتا ہے۔ اس کے پتے سبز، پھل اور ریشِ برگد سرخی مائل ہو سکتے ہیں۔ پھل سرخ ہو تو مائل بہ شیرینی ہوتا ہے ادویاتی استعمال اس کا دودھ (شیرِ برگد) اور پھل کے کئی ادویاتی استعمال ہیں جو قدیم چینی و ہندی طب میں ملتے ہیں۔ اس کے پتوں کو جلا کر زخم پر لگایا جاتا تھا۔ یہ استعمال ہندوستان اور چین کے علاوہ قدیم امریکہ میں بھی تھا۔ شیرِ برگد کو جنسی کمزوری کے لیے مثلاً سرعت انزال اور منی کے کم گاڑھا ہونے کے علاج کے طور پر قدیم زمانے سے استعمال کیا جاتا ہے۔ دیگر اس کی لکڑی بھی استعمال ہوتی ہے۔ یہ انڈونیشیا کا امیری نشان (coat of arms ) ہے۔ جاپان میں اس سے بونسائی (ایک فن جس میں درختوں کو چھوٹے رہنے پر مجبور کیا جاتا ہے حتیِ کہ ایک گملہ میں چھوٹا سا مکمل درخت آ جائے۔بعض اوقات یہ ہزاروں امریکی ڈالر کا ہوتا ہے) میں استعمال کیا جاتا ہے۔ ہندو مت میں اسے مقدس درخت سمجھا جاتا ہے۔ یہ بدھ مذہب میں بھی مقدس ہے کیونکہ روایات کے مطابق گوتم بدھ اسی درخت کے نیچے بیٹھتے تھے جب انہیں ہدایت ملی اسی لیے اسے بدھ کا درخت بھی کہتے ہیں۔

تشریح برگد:شیربرگد۔ ریش برگد۔ برگدکی داڑھی۔? شیربرگد۔ ماہیت۔ شیربرگد جسم پر لگ جائے تویہ کالانشان ڈال دیتا ہے۔چند بوندیں ہاتھ پر ڈال کر ملنے سے کالی بتیاں بن جاتی ہیں۔اور شیربرگد ہوالگنے سے ربڑ کی طرح حجم جاتا ہے۔ مزاج۔ سردخشک درجہ سوم استعمال۔ برگد کا دودھ احتلام ،جریان،سرعت وغیرہ کیلئے بتاشے یا چینی میں ملاکر کھایاجاتا ہے اور ان ہی امراض میں برگد کی داڑھی کا سفوف بناکر چینی ملاکر استعمال کرتے ہیں۔ برگدکے تازہ دودھ میں روئی ترکرکے کچرالی ران کوتحلیل کرتاہے۔یا زیادتی مواد کی صورت میں ورم کو پھوڑ ڈالتا ہے۔ جب پاؤں میں بوائی پھٹی ہوئی ہوتو اس میں بڑ کا دودھ بھر دینے سے جلدی اچھی ہوجاتی ہے۔ خاص ترکیب۔ صبح کوچینی یا بتاشے میں اس کا دودھ دس بوند سے شروع کرکے ایک ایک بوند ہرروز بڑھاتے جاہیں بیس بوند تک دے کر ایک ایک بوند کم کرکے دس بوند پرلے آئیں ۔

یہ سوزاک ،احتلام ،جریان دمہ کھانسی اوردل کے امراض کے لئے مفیدہے۔ کان کے زخم کو اچھاکرنے اور کان کے کیڑوں کو ہلاک کرنے کیلئے برگد کادودھ کان میں ٹپکایا جاتا ہے۔ رقت منی سرعت انزال جریان اور احتلام میں شیر برگد تنہا یا دیگر ادویہ کے ساتھ کھلاتے ہیں جوان امراض کےلئے اکسیر ہے۔ ?ریش برگد (برگدکی داڑھی )یہ بھی جریان ،احتلام اور سرعت انزال کیلئے استعمال ہوتاہے۔ اسکے علاوہ پستانوں سخت کرنے کیلئے ریش برگد کا ضماد کرتے ہیں۔ اوردستوں کو بند کرنے کیلئے پانی میں چھان کو پلاتے ہیں۔ نازک کونپلوں اور ریش برگدکا سفوف بھی مزکورہ امراض کیلئے دیتے ہیں۔ ریش برگد کا سفوف ہموزن شکر ملا کر بقدرایک تولہ دودھ ایک پاؤ کے ہمراہ مردوعورت کو کھلانا معین حمل ہے۔ چھال برگد۔ چھال برگدکا جوشاندہ بواسیری خون کو روکتا ہے۔برگ برگدکوجلا کرمرہموں میں شامل کرتے ہیں۔جو قروحہ اور زخموں کو جلد ٹھیک کرنے میں معاون ہے۔ پھل برگد کو خشک کرکے اور ہم وزن کوزہ مصری کے ہمراہ سفوف صبح و شام دودھ کے ہمراہ کھانا جریان و احتلام کو دور کرتا ہے۔ نفع خاص۔ ممسک و مقوی اعضائے رئیسہ ۔ مضر۔ معدہ اور آنتوں کیلئے ۔ مصلح۔ شہد ،شکر اور کتیرا ، بدل۔ گولر کا دودھ ۔ کیمیاوی اجزاء ۔ چھال میں ٹین دس فیصدی اور ربڑ کی طرح کا مواد ہوتا ہے۔

روغن،ابلیومنائیڈ،کاربوہائیڈریٹ چھ فیصدی پایا جاتا ہے۔ مقدارخوراک۔ کونپل ڈاڈھی اورچھال کی خوراک تین سے پانچ گرام دودھ سے بیس قطرے کوشش کریں کی دودھ دو سے پانچ قطرے ہی ہو۔جوشاندہ ایک سے ڈیڈھ تولہ تک۔ مشہور مرکب۔ حب الخاص بوہڑ کے دودھ والی یابوہڑ کے دودھ والی گولیاں۔ برگد کی چائے برگد ایک ایسا درخت ہے جو صحیح طور پر چائے کا نعم البدل ثابت ہو سکتا ہے اور اس کے ذریعے ہم ملکی زرمبادلہ بچا سکتے ہیں۔ اس کے ہر جزو کو جوش دینے سے چائے جیسا رنگ پیدا ہوتا ہے۔ اس کے نرم نرم پتے جو سرخ رنگ کے ہوتے ہیں سایہ میں خشک کر کے کوٹ کر ڈبوں میں پیک کر کے تجارتی پیمانے پر فروخت کیے جا سکتے ہیں۔ ۶ ماشہ یہ پتے آدھ سیر پانی میں جوش دیں جب آدھ پائو پانی باقی رہ جائے تو حسب دستور چینی اور دودھ شامل کر کے پئیں۔ نزلہ، زکام، کھانسی اور ضعف دماغ کے لیے بے حد مفید ہے۔ اگر برگد کے درخت کے چھلکے کو اس طرح خشک کر کے چینی کی بجائے نمک آمیز کر کے دن میں تین بار بطور چائے استعمال کرائیں تو ملیریا بخار دور ہو جاتا ہے۔ اس کی داڑھی کی چائے پیاس کی زیادتی، گرمی سے ہونے والے بخار، سن سٹروک، نزلہ، زکام اور مردوں کی تمام امراض کے لیے بے حد کار آمد ہے۔

نسخہسرعتِ انزال ، امساک اور سپرم کی کمیمادہ تولید گاڑھ کرتا ھے اور وافر مقدار میں پیدا کرتا ھے اور جریان احتلام کے لئے بھترین نسخہ ھے اور مردانہ جراثیم بڑھاتا ھے اور جگر معدہ مثانے کی گرمی دور کرتا ھے.امساک کے شاکی لوگوں کے لئے زبردست ھے.قابل تعریف ھے ھزاروں مریضوں پر آزمایا ھوا ھے. سرعت انزال کو ختم کرتا ہے.علی رضا جالندھریھوالشافی:موصلی سفید انڈیا 25 گرامموصلی سیاہ 25 گرامثعلب مصری 25 گرامثعلب پنجہ 25 گرامکشتہ نقرہ اعلی 5 گرامبوھڑ کے دودھ 15 گرام میں 5گھنٹے کھرل شدہتالمکھانہ 25 گرامچھلکا اسبغول 25 گرامگوند ببول 25 گراممروارید 7 گراممغز بادام 50 گراممغز جیاپوتا 25 گراممغز پنبہ دانہ 25 گراممغز فندق 25 گرامجوھر خصیہ 10 گرامگوند کتیرا 25 گرامدانہ الائچی خورد 25 گرامپستہ 25 گرامکشتہ قلعی 10 گرامکشتہ مروارید 7 گرام?چھلکا اسپغول کے علاوه باقی تمام ادویات باریک کوٹ کر 10 تولہ مصری ملا کر چھلکا اسپغول بغیر پیسے شامل کرلیں.تیارھے. ایک تا دو چمچ چاۓ والےصبح نھار منہ دودھ کے ساتھ لیں اور رات کو بھی ھمراہ دودھ لیں.اور زیادہ سرد مزاج لوگ دودھ ابال کر گرم دودھ میں ڈال کر رکھ دیں اور صبح نھارمنھ لے سکتے ھیں.علی رضا جالندھری

اس موضوع کو جواب دیں

یہ سائٹ انفرادی کمپیوٹر، پرسنل سروس سیٹنگ، تجزیاتی و شماریاتی مقاصد، مواد اور اشتہارات کی کسٹمائزیشن میں فرق تلاش کرنے کے لئے کوکیز اور دوسری ٹریکنگ ٹیکنالوجیز کو استعمال کرتی ہے نجی معلومات کی حفاظتی اور کوکیز پالیسی