نامردی علاج بغیر دم یا تعویز کے

نامردی

یاد رکھے جو عاقر یعنی بانجھ (Sterile) ہو ضروری نہیں وہ نامرد ہواس کی تین قسمیں ہیںعضوی نامردیفعلی نامردیروحانی نامردیروحانی نامردی کا علاج بغیر دم یا تعویز کے ناممکن ہے کیوں فقیر نے اس کا بہت تجربہ کیا ہےعضوی عنانت (آرگینک امپوٹینسی Organine Impotence)

سادہ زبان میں مرض سے مراد عضو مخصوصہ کی بناوٹ میں خرابی واقع ہونا ہے یا فوطوں کا سائز کم ہونا ہےپہلی وجہ عضو تناسل کی پرورش میں نقص ہو یا بعض حالتوں میں درست پرورش پانے کے باوجود اس میں فساد انحطاط یعنی Degeneration یا طب جدید کے مطابق ہزال یعنی Atrophy کا نقص پیدا ہو جائے تو جوان مرد بھی نا مرد ہو جاتا ہےدوسری وجہ عضوی عنانت کی کن پیڑے میں موجود زہریلے مادوں کی وجہ سے ایک یا دونوں فوطوں متاثر ہو کر مرجھانا شروع کر دیتا ہے جس سے شہوانی طاقت ختم ہو جاتی ہےتیسرے نمبر پر فقیر نے ایسے مریض بھی دیکھے ہیں جن کے فوطے بالکل نہیں ہوتے ہیں اس کی وجوہات سے آگاہی کا مجھے علم نہیں ہوا اور کسی مستند کتب سے بھی عقل کے نزدیک بات نہ ملیچوتھی صورت مرض یا حادثہ اور چوٹ لگنے سے بھی عضو یا فوطہ سوکھ کر نامردی کی علامت بھی پیدا کرتا ہے اگرچہ بعض افراد میں شہوانی جذبات موجود ہوتے ہیںپانچویں شکل ہزال نخاعی یعنی لوکوموٹیوواٹیکسا کی وجہ سے شہوانی خیزش تباہ ہو جاتی ہے فقیر آتشک کے مریضوں میں بھی ہزال نخاعی کو ختم ہوتے دیکھا ہےچھٹی بات پٹھے جو نخاع سے اعضائے مخصوصہ کو جاتے ہیں میں نقص ہو جائے تو ردعمل میں نامردی پیدا ہوتی ہے فقیر نے مشاہدہ کیا ہے کہ نہ علم رکھنے والے معالج و نیم طبیب بس اس کو درست کرنے کی ادویات پر زور دیتے رہتے ہیں جس کی وجہ سے ناکامی کا سامنا کرنا پڑتا ہےساتویں طرز میں دماغی ضرب و سقط سے نائزہ سوکھ کر بھی انتشار میں رکاوٹ پیدا ہو کر نامرد ہو جاتا ہےآٹھویں وجہ ورم و سوزش کی بنا پر آلہ تناسل کے جسم اجوف یا اسفنجی ساخت( جیسے جدید طب کارپس سپنجی اوسم کے نام سے لکھتی ہے ) میں نقص ہونے سے شہوانی خیزش ختم بلکہ ناممکن ہو جاتی ہے جیسے کہ فوطوں کا مرض فیل پا (Elephantiasis) یا بڑے ہائیڈروسیل (فتق مائی)نویں شکل میں مرض نعوذ سوزاکی یعنی Chrode کو رفع کرنے والی غلط ادویات لینے سے عضو تناسل کے اندرونی حصے بالکل جڑ کے قریب سے بہت کمزور پڑ جاتے ہیں جس سے نامردی واقع ہوتی ہے کیونکہ انتشار کے وقت پھیلنا موقوف ہو جاتا ہےیعنی بہت زیادہ احتیاط سے ادویات دو جب پیشاب کی نالی میں جلن یا زخم وغیرہ ہوسوالکچھ لوگ پوچھتے ہیں کہ عضو کے بڑھنے اور پھیلنے سے کون سی چیز روکتی ہے؟ساخت کن پیڑے (Mumps) عضو مخصوصہ کو بڑھنے یا پھیلنے نہیں دیتےسوالہم نے مختلف معالج سے ادویات لی اور آرام نہیں آیا یا فقیر سے ادویات لی تو تندرست نہیں ہوا؟ذرا غور کیجئے اوپر نامردی کی وجوہات پر اور خود اندازہ لگایا کیا آپ نے اپنے معالج کو موقع دیا کہ وہ آپ کی مرض کی وجہ جان پایا یا درست ادویات آپ کو ملی کیونکہ اوپر والی تمام وجوہات صرف ایک قسم کی نامردی کی ہیں جو مغلظات لینے سے کبھی بھی تندرست نہیں ہو گی اور ابھی دو طرح کی اور قسمیں ہے اور ان کی وجوہات الگ؟بہر حال علاج کے لیے ضروری ہے کہ آپ اپنے معالج پر بھروسہ رکھے اور صبر سے کسی اچھے معالج علاج جاری رکھیں جو مذکورہ بالا وجوہات کو دور کرنے کی کوشش کرے یا پھر جو نقص ہے اس کا پتہ لگا کر رفع کرے تو انجام مرض خوشگوار ہو گا وگرنہ پچھتاوے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہےفقیر نے مختلف ایلوپیتھک کتابوں کا مطالعہ کیا جو یورپ ممالک کے نامی گرامی معالج ہیں تو وہاں پر ان ماہر جنسیات نے واضح طور پر یہ لکھا ہوا ہے کہ نامردی کے مریض کو تین ماہ یعنی 90 دن تک کوئی بھی شہوانی تحریک کے لیے دوا نہ دی جائے تاکہ تھکا ہوا مرکز و دیگر اعضائے رئیسہ و شریفہ آرام پائے اور ساتھ موخر قضیب، غدہ قدامیہ و کیستہ المنی کا علاج کرےاور یہ بھی ساتھ لکھ ہے کہ شہوانی خیالات کو قریب بھی نہ آنے دے اور اگر شادی شدہ ہے تو علیحدگی اختیار کرے اور دوران علاج ہر قسم کی جنسی گفتگو و چھیڑ چھاڑ سے دور رہےیہاں فقیر نے جو مشاہدہ کیا ہے وہ یہ ہے کہ لوگ کا نظریہ ہے کہ گولی اندر اور دم جالندھر ہونا چاہیے مطلب نوے دن تو دور نوے گھنٹے بھی نہیں گزرنے دیتے اور معالج بھی بدل ڈالتے اور ساتھ دماغ کا دہی مفت میں کر ڈالتے ہیںبہرحال ایک علاج بہت مجرب پایا بیان کرتا ہوں کہ شاید کوئی فائدہ اٹھایا اور فقیر کے لیے باعث نجات بنےاجزاءدوران علاج یاد رکھے اگر غدہ قدامیہ بڑھا ہو یا ورم زدہ ہو تو چھونے سے درد کا احساس ہو گا تو چار روز بعد انگلی ڈال کر مالش کرےعمل پیشاب کرنے سے پہلے کرو اور انگلی پر ویزلین لگاؤپھر بھی فقیر کی رائے ہے کہ درد کی صورت میں آلہ انڈوسکوپ کے ذریعے پراسٹیٹک یوریتھرا کا معائنہ کرا لینا چاہیےتین ماہ تک پوٹاشیم برومائیڈ دو کیپسول 500 ملی گرام کے تین ماہ تک استعمال کرواور تین ماہ بعدسڑکینیا تین ملی گرامیوہمبین بیس ملی گرامکیپسول یا گولی کی شکل میں دودھ سے لےاور روٹی مکھن سے تر کر کے کھائے(جاری ہے)حکیم محمد سہیل

اس موضوع کو جواب دیں

یہ سائٹ انفرادی کمپیوٹر، پرسنل سروس سیٹنگ، تجزیاتی و شماریاتی مقاصد، مواد اور اشتہارات کی کسٹمائزیشن میں فرق تلاش کرنے کے لئے کوکیز اور دوسری ٹریکنگ ٹیکنالوجیز کو استعمال کرتی ہے نجی معلومات کی حفاظتی اور کوکیز پالیسی