بانجھ پن کیا ہے بانجھ پن کا مطلب

?بانجھ پن کیا ہے? بانجھ پن کا مطلب ہے کہ ایک سال تک کسی قسم کا مانع حمل استعمال کیے بغیر باقاعدگی سے سیکس کرنے کے باوجود بھی حمل نہ ٹھہرے۔ یہ مسئلہ ہر 6 میں 1 ایک جوڑے کو درپیش ہے۔

? بانجھ پن کے اسباب? نیم بانجھ پن کے بہت سے اسباب ہیں اور یہ مرد و عورت دونوں میں پائے جاتے ہیں۔ مرد اور عورت نیم بانجھ پن کے مسئلے میں 30 تیس فیصد تک حصہ دار ہوتے ہیں جبکہ باقی ماندہ 40 فیصد کیسوں میں یا تو یہ مشترکہ مسئلہ ہوتا ہے یا پھر ناقابل شناخت (ناقابلِ وضاحت رکاوٹ) رہتا ہے ۔ یہ بات مدِنظر رہنی چاہیے کہ مردوں اور عورتوں کے مسائل عام طور پر بیک وقت پائے جاتے ہیں، اس لیے جانچ کے عمل میں دونوں کو شامل ہونا چاہیے۔

?عورتوں میں بانجھ پن?

1⃣ عورت کی عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ اس میں زرخیزی بھی کم ہوتی رہتی ہے۔ بالخصوص تیس کی دہائی کے وسط سے۔ 2⃣انڈوں کے اخراج کا مسئلہ یعنی پولی سسٹک اووری سائنڈروم، قبل از وقت حیض کی بندش، تھائرائیڈ کا مسئلہ وغیرہ۔ 3⃣کولہوں کا جُڑ جانا یا فیلوپین ٹیوبوں کا بند ہو جانا، جو کہ اینڈومیٹروسس، کولہوں کی انفیکشن، کولہوں کے آپریشن یا بچہ دانی میں غیر معمولی ڈھانچے کے نتیجے میں ہو سکتا ہے۔ ?مردوں میں بانجھ پن?

ناموافق عوامل جو نطفے کی پیداوار یا ترسیل کو متاثر کرتے ہیں جیسا کہ سگریٹ نوشی، شراب نوشی، خصیوں کا اپنی جگہ پر نہ ہونا، سکروٹم میں ویریکوز رگ (ویریکوسیلی)، یا گزشتہ انفیکشن یا آپریشن سے جنسی اعضا کو نقصان پہنچنا۔

اگر تفصیلی ہسٹری اور جسمانی معائنے کے بعد تحقیق میں کسی بھی سبب کی تشخیص نہ ہو تو اسے ’غیر واضح نیم بانجھ پن‘ کہا جائے گا۔ غیر واضح بانجھ پن میں دو عوامل حمل کے امکان پر اثر انداز ہوتے ہیں؛ بانجھ پن کی مدت اور عورت کی عمر۔ ان خواتین میں قدرتی طریقے سے حاملہ ہونے کی صلاحیت کم ہو جائے گی، جن کی عمر بڑھ چکی ہے یا ایسے جوڑے جو تین سے زائد برسوں سےبانجھ پن کا شکار ہوں. ?عمومی مشورہ

1⃣باقاعدگی سے جنسی عمل کریں، جیسا کہ ہفتے میں 2 سے 3 مرتبہ جبکہ انڈے بننے کے دنوں میں اس میں اضافہ بھی کیا جا سکتا ہے (ہر 2 روز بعد)۔ 2⃣جوڑے کو چاہیے کہ سگریٹ نوشی، شراب نوشی اور منشیات کا استعمال بند کر دے۔ 3⃣واضح طور پر زیادہ وزن کی شکار خواتین کو حاملہ ہونے میں مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ ان میں اسقاطِ حمل کا خطرہ زیادہ رہتا ہے۔ 4⃣ دوسری طرف، بہت زیادہ کم وزن والی خواتین کی ماہواری کی ترتیب متاثر ہوتی ہے اور ان میں انڈے بننے کا عمل سست رہتا ہے۔ لہذا، انہیں چاہیے کہ اپنا وزن متوازن رکھیں۔ 5⃣انتہائی متوازن خوراک، باقاعدگی سے جسمانی مشقت اور ذہنی دباؤ کو قابو میں رکھنا، تولیدی صحت کے لیے نہایت اہم ہیں۔ 6⃣ایسی خواتین جنہیں ربیولا کے خلاف اپنی قوت مدافعت پر یقین نہ ہو، حمل سے پہلے ربیولا ٹیسٹ کروائیں ۔ 7⃣جنسی فعل کی زیادتی، جیسا کہ ہر رات، سے نطفوں کی تعداد کی کم ہو سکتی ہے۔ دوسری طرف، بہت کم جنسی فعل، جیسا کہ ہفتے میں ایک بار، بے جان نطفوں کا سبب بن سکتا ہے۔ دونوں صورتوں میں حمل ٹھہرے کا امکان نہایت کم ہو جاتا ہے۔ ?احتیاطیں خواتین کے لیے?

تیس کی دہائی کے آخر میں تین یا زائد اسقاطِ حمل لمبی یا بے قاعدہ ماہواری تین ہفتوں یا اس سے کم عرصے بعد ماہواری ماہواری یا جنسی عمل کے دوران درد اینڈومیٹروسس کی ہسٹری کولہوں میں انفیکشن کی ہسٹری کولہوں یا اوری آپریشن کی ہسٹری ?مردوں کے لیے?

بچپن میں کن پیڑے نکلے ہوں تناؤ یا اخراج میں مسائل ہوں پروسٹیٹ انفیکشن کی ہسٹری خصیوں کا اپنی جگہ پر نہ پایا جانا ویریکوسیل کی ہسٹری بانجھ پن مکمل بانجھ پن جیسا نہیں ہوتا۔ بعض طبی مسائل کو دوسروں کی نسبت آسانی سے حل کیا جا سکتا ہے۔ لہذا، جوڑوں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ فی الفور طبی ماہرین سے رائے لیں۔ ہومیو پیتھک ڈاکٹر وسیم اقبال What's app 03005973756

https://www.facebook.com/drrwasi/photos/a.1019832518198005/1118596988321557/type=3

اس موضوع کو جواب دیں

یہ سائٹ انفرادی کمپیوٹر، پرسنل سروس سیٹنگ، تجزیاتی و شماریاتی مقاصد، مواد اور اشتہارات کی کسٹمائزیشن میں فرق تلاش کرنے کے لئے کوکیز اور دوسری ٹریکنگ ٹیکنالوجیز کو استعمال کرتی ہے نجی معلومات کی حفاظتی اور کوکیز پالیسی